گردن کی تکلیف کی وجوہات
مختلف قسم کے مسلے

گردن کی تکلیف کی وجوہات

آرام طلب طرز زندگی نے نئے نئے عوارض کو جنم دیا ہے۔ لوگوں میں صحت کے متعلق بنیادی شعور اجاگر کرنے کی ضرورت ہے۔ سوتےوقت اونچا تکیہ رکھنے سےبھی ریڑھ کی ہڈی کی قدرتی ساخت متاثر ہوتی ہے۔ جن افراد کو گردن میں درد کی شکایت ہو انہیں تکیے کے بغیر سونا چاہیے

ہمارا معاشرہ بڑی تیزرفتاری سے بدل رہا ہے۔ عالمگیریت اور کارپوریٹ کلچر نے معیار زندگی بھی بدل دیا ہے اب گاؤں دیہات ہوں یا شہر، زندگی گزارنے کے ڈھنگ بدل چکے ہیں۔ فرق صرف اتنا ہے کہ شہروں میں ٹیکنالوجی کی فراوانی زیادہ ہے یہاں کے لوگ دن بھر مشینوں کے جال میں جکڑے رہتے ہیں۔ گھر، دفاتر اور دیگر معمولات زندگی کے لیے مشینوں کا سہارا لینا عادت سے زیادہ ضرورت بن گیا ہے۔ دفاتر میں مسلسل بیٹھے رہنا، بیٹھ کر کھانا، کھاکر بیٹھ جانا، تھکن کی حالت میں بھی کام کرتے رہنا، غیرصحت بخش کھانے، اسنیکس، چائے، کافی اور کمپیوٹر کا استعمال صحت کیلئے مضر ہے۔ اس ضمن میں نیند کی کمی بھی بہت سے مسائل کھڑے کرسکتی ہے۔ ملک کی ایک بڑی اور مشہور یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر کے مطابق ’’روزمرہ معمولات میں شامل بہت سی عادات گردن کے درد کا باعث بنتی ہیں۔ مثال کے طور پر گھنٹوں میز پر جھک کر لکھتے یا پڑھتے رہنا، ٹی وی یا دیگر کاموں کے دوران ایسے انداز میں بیٹھنا یا لیٹنا جس سے گردن کے غیرفطری زاوئیے بنیں۔ ٹی وی یا کمپیوٹر اسکرین کو بہت اوپر یا نیچے کی طرف گردن کرکے دیکھنا‘ غیرآرام دہ حالت میں سونا اور جاگنا۔ ورزش کے دوران بے احتیاطی کرنا وغیرہ ان تمام طریقوں سے گردن کے درد جیسے عوارض بڑھ رہے ہیں ایسی صورتحال میں درد سب سے پہلے گردن کے پٹھوں کو متاثر کرتا ہے

مزید معلومات کے لیے کال کریں شکریہ
03335933316